Untitled Document
Google
Web
mashriqkashmir.com
Untitled Document
دراندازی کی کوششیں بڑھ گئی ہیں :فوج 

جموں/۱۹ستمبر
ہندوستانی فوج کاکہنا ہے کہ گزشتہ چند ماہ میں دراندازی کی کوششوں میں اضافہ ہوا ہے ۔
۱۶ ویں کور کے سربراہ لیفٹیننٹ جنرل جے پی نہرا نے آج یہاں ایک سمینار سے خطاب اور بعدازاں ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہا ’’گزشتہ ایک ڈیڑھ ماہ سے دراندازی کی کوششوں میں اضافہ ہوا ہے ‘ لیکن ہم چوکس ہیں ۔‘‘انہوں نے مزید کہا ’’ہماری کنٹرول لائن اور سرحد کی منیجمنٹ مضبوط ہے‘دراندازی کی کوششوں میں اضافہ ہوا ہے لیکن ہم انہیں ناکام کرنے میں کامیاب ہو ئے ہیں ۔‘‘
لیفٹیننٹ جنرل نے کہا کہ پاکستان کی جانب سے سیز فائر کی خلاف ان کی بوکھلاہٹ عیاں کردیتی کیونکہ جنگجوؤں کی دراندازی کی کوششیں ناکام کر دی گئی ہیں ۔’’یہ ان کی بوکھلاہٹ ہے کیونکہ وہ دراندازی میں کامیاب نہیں ہوئے ہیں یا پھر یہ پاکستان کی جانب سے کوئی اور حکمت عملی ہو سکتی ہے جس کا ہمیں ابھی پتہ نہیں۔‘‘
نہرا نے کہا کہ پاکستان کے زیر انتظام کشمیر میں جنگجوؤں کے تربیتی کیمپوں کی تعداد بدلتی رہتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت کنٹرول لائن کے اُس پار ۴۲ تربیتی مراکز ہیں ۔
لیفٹیننٹ جنرل این پی نہرا نے جموں میں منعقدہ ایک سمینار میں آج کہا’’ ہمیں اس گمان میں نہیں رہنا چاہیے کہ پاکستان جموں وکشمیر کے حوالے سے اپنی پالیسی یا حکمت عملی میں کوئی تبدیلی لانے والا ہے ۔‘‘ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے اندرونی حالات بھلے کچھ بھی ہوں ‘ اسلام آباد اپنی کشمیرپالیسی میں کوئی تبدیلی نہیں لائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ اُس پار سے جموں وکشمیر میں انتہا پسندوں کو بھیجنے کا سلسلہ جاری ہے اور آئندہ بھی ایسی کوششیں جاری رہ سکتی ہیں۔
ضلع راجوری میں جنگجوؤں کی طرف سے مختلف لوگوں کو ملنے والی دھمکیوں پر تشویش ظاہر کرتے ہوئے ۱۶ویں کور کے سربراہ نے بتایا کہ اس سلسلے میں فوج نے پولیس اور سول انتظامیہ کے اشتراک سے احتیاطی اقدامات اٹھائے ہیں تاکہ کوئی معصوم شہری بلا وجہ جنگجوؤں کے غضب کا شکار نہ بن سکے ۔ انہوں نے زور دے کر کہا کہ ضلع راجوری یا ریاست کے کسی دوسرے علاقہ میں جنگجو گروپوں کو سر نو منظم ہوکر عوامی جان ومال کے ساتھ ساتھ امن وامان کو زک پہنچانے کا موقعہ نہیں دیا جائے گا۔ 
لیفٹیننٹ جنرل نے کہا کہ ریاستی عوام امن اور ترقی کے خواہاں ہیں لیکن جنگجو اس کے خلاف ہے اس لئے ان کی طرف سے عوام کو ڈرانے دھمکانے کی کوششیں کی جارہی ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ دراندازی کی کوششوں کو بروقت ناکام بنانے کیلئے لائن آف کنٹرول پر فوج نے سخت نگرانی اور چوکسی کے اقدامات اٹھارکھے ہیں جس کے نتیجے میں گذشتہ کئی ماہ کے دوران حد متارکہ کے نزدیک ہی سرحد پار سے آنے والے جنگجوؤں کو ہلاک کیا گیا یا واپس مڑنے پر مجبور کیا گیا ۔

Untitled Document
Untitled Document
© COPY RIGHT THE DAILY NIDA-I-MASHRIQ ::1992-2007
POWERED BY WEB4U TECHNOLOGIES::e-mail